Behaviors & Attitudes, Emaan, Eman, Islam, Love your Creator... اللہ سے محبت کیجئے, Pakistan, اسلام

B L E S S E D – F R I D A Y

بلیسڈ فرائیڈے

وجہ چاہے عالمگیریت ہو یا مرعوبیت ، روشن خیالی ہو یا میڈیا کی ڈھٹائی، غیر اسلامی معاشروں کا گند غلاظت رفتہ رفتہ اسلامی معاشرت کو آلودہ کرتا جا رہا ہے۔ صحیح غلط کی پہچان مٹتی جا رہی ہے۔ کفار ہم سے کچھ سیکھیں نہ سیکھیں، ہم ان سے بہت کچھ امپورٹ کر رہے ہیں۔
پہلے ویلنٹائن ڈے جیسا فحش اور قبیح تہوار مسلم ممالک میں داخل ہوا اور اب بلیک فرائیڈے کا ڈنکا بج رہا ہےیا بجایا جا رہا ہے۔ مختلف اداروں کی جانب سے بھرپور رعایتی سیل کے اعلانات ہو رہے ہیں۔ ویب سائٹس ، ایس ایم اسی مارکیٹنگ اور سوشل میڈیا کے ذریعے خوب تشہیر کی جا رہی ہے۔ معروف پاکستانی آن لائن اسٹور دراز ڈاٹ پی کے نے اس موقع پر قیمتوں میں ۸۶ فیصد تک رعایت کا اعلان کیا ہے۔ اس رعایتی سیل کی تشہیر کے لئے لگائے گئے بینرز پوسٹرز شہر میں مختلف مقامات پر دیکھے جا سکتے ہیں ۔ اسی طرح معروف کورئیر سروس ٹی سی ایس کے آن لائن اسٹور یہ وہ ڈاٹ کام نے بھی اس موقع پر ۸۰ فیصد تک رعایت کا اعلان کیا ہے۔

جمعہ شعائر اسلام میں سے ہے۔ مسلمانوں کے لئے یہ بڑا اہم اور فضیلت والا دن ہے ۔ اس کی شان میں رسول اللہ ﷺ کی متعدد احادیث مبارکہ بھی روایت ہوئی ہیں۔ سید الانبیاء ﷺ نے جمعہ کو سید الایام کہا یعنی ہفتہ کے دنوں کا سردار ۔ اسی طرح ایک حدیث مبارکہ کا مفہوم ہے کہ سورج کے طلوع و غروب والے دنوں میں کوئی بھی دن جمعہ کے دن سے افضل نہیں۔ اسلام کے متوالوں کے لئے یہ رحمتوں اور برکتوں والا دن ہے، ایک روشن اور منور دن ہے۔

لیکن ایک مخصوص ایجنڈے کے تحت اس دن کوسیاہ دن کا نام دیا جا رہا ہے اور اب اس کی اس قدر منظم انداز میں تشہیر کی جا رہی ہے کہ مسلمانوں کی زبانوں پر بھی یہی الفاظ چڑھتے جا رہے ہیں۔ عالم اسلام کو اس قسم کی چالبازیوں سے ہوشیار اور چوکنا رہنے کی ضرورت ہے۔ ہم کفار کو تو نہیں روک سکتے البتہ ان کی تقلید سے بچنا بہرحال ضروری ہے۔

ہم ان سطور کے ذریعے پاکستان کے تمام اسٹورز اور برانڈز کو متنبہ کرتے ہیں کہ خدارا اسلامی شعائر کی اہانت سے باز رہئے۔ کیا ضروری ہے کہ مسلمان بھی اسی دن سیل کے اعلانات کرتے پھریں ؟ اسلام نے عید الفطر اور عید الاضحیٰ کے دو تہوار دے رکھے ہیں۔ اگر سیل لگانی ہے تو ان مواقع پر لگائیے تاکہ آپ کے دینی بھائیوں کو فائدہ ہو۔ اور آخری بات یہ کہ اگر آپ نے اسی دن سیل لگانی ہے تو کم از کم اس مکروہ نام سے تو نہ لگائیے ، کیوں نہ ایک نیا نام متعارف کرا دیا جائے۔۔۔ بلیسڈ فرائیڈے یا برائٹ فرائیڈے۔۔۔
#Blessed_Friday
#Bright_Friday

Advertisements
Aitakaaf, Eid, Islam, Ramadhan, لیلۃ القدر, اسلام, رمضان المبارک, عید

Indicator

انڈیکیٹر

عید الفطر کے فوراً بعد (اکثر اگلے ہی روز سے) شادیوں کا سلسلہ شروع ہو جاتا ہے۔
رمضان المبارک کے بعد ہم گناہوں کی طرف کس قدر بے تابی سے  لپکتے ہیں ، اس کا اندازہ لگانا ہو تو یہ شادیوں کی تقریبات بہترین انڈیکیٹر ہیں۔
غیر شرعی رسومات، مخلوط محافل،
بے پردگی، بے ہودگی،
چھچھور پن، فحش گانے ، بے ہنگم موسیقی،
ان گانوں پر تھرکتی ناچتی اپنی ہی بہنیں بیٹیاں بییویاں بھانجیاں بھتیجیاں،
اس “مجرے “کو دیکھ کر انجوائے کرنے والے اپنے ہی باپ بھائی شوہر چچا تایا ماموں کی بے غیرتیاں،
دولہا دلہن کا شادی ولیمہ کے پنڈال میں پیش کیا جانے والا “آئٹم نمبر “،
اور جانے کیا کیا۔۔۔

ایسے میں کسی کو شاید احساس تک نہیں رہتا کہ ۔۔۔
ابھی چند دن پہلے ہی رمضان المبارک کا مقدس مہینہ رخصت ہوا ہے۔۔۔
ابھی چند دن پہلے ہی عشرہ رحمت، عشرہ مغفرت اور عشرہ نجات گزرا ہے۔۔۔
ابھی چند دن پہلے ہی رب کو راضی کرنے کے لئے روزے رکھے تھے۔۔۔
ابھی چند دن پہلے ہی رب کو راضی کرنے کے لئے راتوں کو قیام کیا تھا۔۔۔
ابھی چند دن پہلے ہی جہنم سے آزادی کے لئے اعتکاف کیا تھا۔۔۔
ابھی چند دن پہلے ہی لیلۃ القدر میں مغفرت کی دعائیں مانگی تھیں۔۔۔
ابھی ایک دو دن قبل ہی لیلۃ الجائزہ میں رمضان المبارک کی عبادات کی قبولیت کے لئے آہ و زاری کی تھی۔۔۔
اور ابھی کل یا پرسوں ہی عید الفطر کی نماز پڑھنے کے بعد رب العزت کی بارگاہ سے مغفرت کے پروانے حاصل کر کے عید گاہ سے نکلے تھے۔۔۔
انا للہ و انا الیہ راجعون

یاد کیجئے کس لئے عطا کیا گیا تھا یہ مہینہ؟
لعلکم تتقون
(تاکہ تم متقی بن جاؤ)

Eid, Ramadhan, رمضان المبارک, عید

Eid-e-Saeed

عید سعید

ابو شہیر

عید کیا ہے ؟

عید مسلمانوں کا مذہبی تہوار ہے ۔ اس دن مسلمان خوشی مناتے ہیں۔

مسلمان یہ خوشی کیوں مناتے ہیں ؟

حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ جب عید کا دن ہوتا ہے تو حق تعالیٰ شانہ اپنے فرشتوں کے سامنے بندوں کی عبادت پر فخر فرماتے ہیں ( اس لئے کہ انہوں نے آدمیوں پر طعن کیا تھا ) اور ان سے دریافت فرماتے ہیں کہ اے فرشتو! کیا بدلہ ہے اس مزدور کا جو اپنی خدمت پوری پوری ادا کر دے ؟ وہ عرض کرتے ہیں کہ یا رب! اس کا بدلہ یہی ہے کہ اس کی اجرت پوری دے دی جائے۔ تو ارشاد ہوتاہے کہ فرشتو! میرے غلاموں اور باندیوں نے میرے فریضہ کو پورا کر دیا ، پھر دعا کے ساتھ چلاتے ہوئے ( عیدگاہ کی طرف ) نکلے ہیں۔ میری عزت کی قسم! میرے جلال کی قسم ! میرے علو شان کی قسم ! میرے بلندیٔ مرتبہ کی قسم ! میں ان لوگوں کی دعا ضرور قبول کروں گا ۔ پھر ان لوگوں کو خطاب فرما کر ارشاد ہوتا ہے کہ جاؤ! تمہارے گناہ معاف کر دیئے ہیں اور تمہاری برائیوں کو نیکیوں سے بدل دیا ہے ۔ پس یہ لوگ عید گاہ سے ایسے حال میں لوٹتے ہیں کہ ان کے گناہ معاف ہو چکے ہوتے ہیں۔ ( رواہ البیہقی فی شعب الایمان کذا فی المشکوٰۃ)

سبحان اللہ! کیا منظر ہو گا کہ آسمانوں میں اللہ رب العزت کا دربار لگا ہوا ہے ۔ اللہ رب العزت اپنے عرش پر جلوہ افروز ہیں ۔ فرشتے دست بستہ کھڑے ہوئے ہیں۔ اور سوال جواب کا ایک سیشن session منعقد ہو رہا ہے ۔ کیا منظر ہو گا کہ اللہ رب العزت میری آپ کی طرف اشارہ کر کے ، میرا آپ کا نام لے کر کہے : ارے فرشتو! تم تو کہتے تھے یہ زمین میں فساد کرے گا۔ آؤ دیکھو۔ یہ میرا فلاں بندہ ہے ۔۔۔یہ میرا فلاں بندہ ہے ۔۔۔ یہ میرا فلاں بندہ ہے ۔ دیکھو اس نے اپنی ذمہ داری پوری ادا کر دی ۔ اس نے مجھے دیکھا بھی نہیں لیکن پھر بھی میں نے اس سے جو کہا ، اس نے کر کے دکھا دیا ۔ یہ میری محبت میں ، میری اطاعت میں کھانا پینا چھوڑ بیٹھا تھا۔ نماز ، تلاوت ، صدقہ سے مجھے خوش اور راضی کرنے کی کوشش میں لگا رہا ۔ اس دھن میں مگن رہا کہ مجھے ۔۔۔ اپنے رب کو دوسروں سے زیادہ نیکیوں میں بڑھ کر دکھا دے ۔ میری جنت کو نہیں دیکھا لیکن مجھ سے جنت طلب کرتا رہا ۔ میری جہنم کو نہیں دیکھا لیکن اس کے پناہ مانگتا رہا ۔ بتاؤ اب میں اس کو کیا بدلہ دوں؟ فرشتوں کا جواب ہو گا کہ الٰہی طریقہ تو یہی ہے کہ مزدور جب اپنی خدمت پوری کر دے تو اس کی مزدوری عطا کر دی جائے ۔

کیا منظر ہوتا ہو گا اس وقت کہ جب اللہ رب العزت ۔۔۔ میرے لئے ۔۔۔ آپ کے لئے ۔۔۔ اپنی عزت کی ، اپنے جاہ و جلال کی ، اپنی رفعت شان کی ، اپنے بلند و بالا مرتبہ کی قسمیں کھا کر ۔۔۔ چار قسمیں کھا کر کہہ رہے ہوں گے : میرے بندے ! میں تمہاری دعا ضرور قبول کروں گا ۔ اے میرے بندے فلاں ! اے میرے بندے فلاں ! اے فلاں بن فلاں! آج عید کا دن ہے ۔ آج خوشیوں کا دن ہے ۔ آج تو خوش ہو جا ۔۔۔ آج میں تیری مغفرت کا اعلان کرتا ہوں ۔ جا تیرے تمام گناہ معاف کر دئیے ۔۔۔ یہی نہیں بلکہ تیرے گناہوں کی جگہ بھی نیکیاں لکھ دیں۔ کیسی زبردست ہوتی ہو گی آسمانوں میں منعقد ہونے والی عید کی تقریب۔۔۔

کاش ہم دیکھ سکتے!

کاش ہم سن سکتے !

کاش ہم محسوس کر سکتے!

کاش ہم جان سکتے کہ عید کیا ہے؟