Emaan, Islam, Social, امر بالمعروف و نہی عن المنکر, اسلام, علم دین

سائیڈ اسٹینڈ اٹھا لیں

سائیڈ اسٹینڈ اٹھا لیں

دو تین روز قبل ایک واٹس ایپ گروپ میں ایک صاحب نے ازدواجیات پر مبنی ایک لطیفہ شیئر کیا۔

بیوی: میں نے سنا ہے کہ جنت میں مردوں کو حوریں ملیں گی تو عورتوں کو کیا ملے گا؟

شوہر: کچھ نہیں۔ یہ پیکیج صرف مظلوم طبقے کے لیے ہے۔

اس خیال سے کہ موصوف لطیفے کے متن سے صرف نظر کر گئے ہوں گے، میں نے توجہ دلائی کہ۔۔۔ اس طرح کے لطیفے نہ بنانے چاہئیں نہ شیئر کرنے چاہئیں۔ ایمانیات کے خلاف ہیں۔ “عورتوں کو جنت میں کیا ملے گا” کے جواب میں “کچھ نہیں” کہہ کر قرآن میں ایمان والی عورتوں کے لیے درج جنت کے انعامات کی نفی کر دی گئی۔۔۔ گویا مذاق مذاق میں قرآن کا انکار ہو گیا۔ سورة الاحزاب کی آیت 35 بھی مثال کے طور پر شیئر کی۔

إِنَّ الْمُسْلِمِينَ وَالْمُسْلِمَاتِ وَالْمُؤْمِنِينَ وَالْمُؤْمِنَاتِ وَالْقَانِتِينَ وَالْقَانِتَاتِ وَالصَّادِقِينَ وَالصَّادِقَاتِ وَالصَّابِرِينَ وَالصَّابِرَاتِ وَالْخَاشِعِينَ وَالْخَاشِعَاتِ وَالْمُتَصَدِّقِينَ وَالْمُتَصَدِّقَاتِ وَالصَّائِمِينَ وَالصَّائِمَاتِ وَالْحَافِظِينَ فُرُوجَهُمْ وَالْحَافِظَاتِ وَالذَّاكِرِينَ اللَّهَ كَثِيرًا وَالذَّاكِرَاتِ أَعَدَّ اللَّهُ لَهُم مَّغْفِرَةً وَأَجْرًا عَظِيمًا۔

بے شک اللہ نے مسلمان مردوں اور مسلمان عورتوں اور ایمان دار مردوں اور ایماندار عورتوں اور فرمانبردار مردوں اور فرمانبردار عورتوں اور سچے مردوں اور سچی عورتوں اور صبر کرنے والے مردوں اور صبر کرنے والی عورتوں اور عاجزی کرنے والے مردوں اور عاجزی کرنے والی عورتوں اور خیرات کرنے والے مردوں اور خیرات کرنے والی عورتوں اور روزہ دار مردوں اور روزہ دار عورتوں اور پاک دامن مردوں اور پاک دامن عورتوں اور اللہ کو بہت یاد کرنے والے مردوں اور بہت یاد کرنے والی عورتوں کے لیے بخشش اور بڑا اجر تیار کیا ہے۔

اور بھی بہت ساری آیات ہیں جن میں ایمان والی عورتوں کے لیے انعامات کا ذکر ہے۔

بولے: ڈیئر۔۔۔

یہ واٹس ایپ گروپ تبلیغ کے لیے نہیں ہے۔

اگر ہم ایک لمحے کے لیے ہنس مسکرا لیں تو ہمیں ایسا کرنے دو۔

میں نے جواب دیا: تبلیغ کون کر رہا ہے بھائی۔۔۔

میں تو بس یہ کہہ رہا تھا کہ اپنی بائیک کا سائیڈ اسٹینڈ اٹھا لیں۔

تدبّروا

Emaan, Islam, Love your Creator... اللہ سے محبت کیجئے, Social, Uncategorized, اسلام

کورونا اور ماسک

کورونا اور ماسک

دو چار دن گھنٹہ دو گھنٹے کے لیے ماسک لگانا پڑا۔ سخت گھٹن محسوس ہوئی۔ سانس لینا مشکل۔ ماسک کے اندر ایک طرف پچھلے سانس کی گرمی و نمی، دوسری جانب ناک کے اطراف کے مساموں سے جاری ہونے والا پسینہ۔ عینک لگانے والوں کے لئے ہر سانس کے ساتھ شیشوں پر نمی کی پریشانی الگ۔ تو مختصراً یہ کہ انتہائی مشکل کام ہے۔ پردہ دار بیبیوں کی مشقت کا اندازہ ہوا۔ اور یہ تو صرف چہرے کی کیفیت ہے۔ انہوں نے تو بدن پر عبایا بھی پہنا ہوا ہوتا ہے۔ سر تا پا مستور و محصور۔

یہ حجاب و نقاب کا اہتمام معمولی عمل نہیں ہے۔ اول اللہ کی فرمانبرداری کا جذبہ، دوم اللہ کی نافرمانی کا خوف، سوم یہ گھٹن کی مشقت، چہارم معاشرے کے طنز و طعنے۔۔۔

قابل احترام مسلم خواتین۔۔۔

یقیناً اللہ بڑا قدردان ہے۔

یقیناً مشقت ختم ہو جائے گی۔

یقیناً اجر ہمیشہ ہمیشہ باقی رہے گا۔

ڈٹی رہئے۔

اللہ تعالی طاعات پر آسانی و استقامت عطا فرمائے۔

آمین۔

#کورونا_ڈائریز

Behaviors & Attitudes, Social, Uncategorized

Conventianal or Guerilla War?

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 250%; line-height: 200%; text-align: right;”> روایتی یا گوریلا جنگ؟

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>دیکھئے یہ جنگی صورتحال ہے۔ سو حکمت عملی بھی جنگی ہی اپنانی پڑے گی۔ دشمن کی جب طاقت بہت زیادہ ہو، تعداد بہت زیادہ ہو، یا مد مقابل میں مقابلہ کرنے کی صلاحیت یا پیش قدمی روکنے کی سکت نہ ہو، تو ایسے میں روایتی جنگ لڑنا اپنی افرادی و مادی قوت کو داؤ پر لگانے کے مترادف ہے۔ ایسے میں گوریلا جنگ کا آپشن زیادہ مناسب اور موثر ہوتا ہے۔

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>کورونا وائرس دنیا بھر میں جس تیزی سے پھیلتا جا رہا ہے اور جس کثرت سے لوگ اس کا شکار ہو کر بیمار یا فوت ہوتے جا رہے ہیں، اس کے بعد اس وائرس کے سامنے آ کر لڑنا ہرگز دانش مندی نہیں۔ اگر کوئی اس وائرس کو آسان لے رہا ہے تو وہ خود کو بھی خطرے میں ڈال رہا ہے اور اپنے متعلقین کو بھی۔ اچھی طرح سمجھ لینا چاہیے کہ موجودہ صوتحال میں ہمارے پاس گوریلا جنگ سے زیادہ موزوں آپشن کوئی نہیں ہے۔

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>گوریلا جنگ کا پہلا قاعدہ یہ ہے کہ فوری طور پر اپنے افرادی و مادی وسائل کو محفوظ مقام پر منتقل کر لیا جائے۔ آپ کے لیے سب سے محفوظ مورچہ آپ کا اپنا گھر ہے۔ خواہ مخواہ باہر نکلنا خطرناک ہی نہیں تباہ کن ہو سکتا ہے۔ آپ دشمن کو گھر کی راہ دکھا سکتے ہیں۔ یا دشمن آپ کا تعاقب کر کے آپ کے کسی عزیز یا متعلقہ فرد کو نشانہ بنا سکتا ہے۔

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>اگلے مرحلے میں دشمن کی نقل و حرکت پر نظر رکھنی ہو گی۔ کمزوریاں تلاش کرنی ہوں گی اور موقع تاک کے چھاپہ مار کارروائیاں کی جائیں گی۔ کورونا کے مدمقابل ہتھیار یعنی دوا اس وقت دستیاب نہیں ہے۔ دوا کی تلاش و تیاری کے لیے کوششیں جاری ہیں۔ یہ صورت چھاپہ مار کارروائیوں سے مشابہ ہے۔ اللہ تعالی انسانیت پر رحم فرمائے اور جلد از جلد اس وائرس کا توڑ عطا فرمائے۔

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ گرمی میں اضافہ کے ساتھ وائرس کا زور ٹوٹنا شروع ہو جائے گا، دوسرے الفاظ میں وائرس تھکنا شروع ہو جائے گا۔ کمزور پڑ جائے گا۔ اللہ عافیت فرمائے کہ ایسا ہی ہو۔ تب شاید ہلکے پھلکے ہتھیار بھی کارآمد ثابت ہوں۔ اس وقت اس کا تعاقب بھی کیا جائے گا۔ تب تک دیکھو اور موقع کا انتظار کرو کی پالیسی اپنانی ہو گی۔

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>جنگ کا ایک اصول یہ بھی ہے کہ دشمن کے جاسوسوں سے بھی محتاط رہا جائے۔ سوائے انتہائی قابل اعتماد افراد کے، کسی پر بھروسہ نہیں کیا جا سکتا۔ موجودہ صورتحال میں یہ انتہائی قابل اعتماد افراد صرف اور صرف آپ کے اپنے اہل خانہ ہو سکتے ہیں۔ باقی تمام رشتہ دار متعلقین دوست احباب دفتر کے ساتھیوں کو اس وقت جاسوس کی فہرست میں شمار کیا جا سکتا ہے۔ لہذا عقلمندی اسی میں ہے کہ محتاط رہا جائے۔

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>اپنا دفاع بھی مضبوط کرنا ہے اور اپنی سیکیورٹی بھی۔ دفاع کی مضبوطی قوت مدافعت کی مضبوطی پر منحصر ہے۔ سو ایسی غذا استعمال کرنی ہو گی جس سے قوت مدافعت کو تقویت ملے۔ نزلہ زکام کھانسی کا باعث بننے والی اشیاء کو فی الحال ترک کرنا ہو گا۔ سگریٹ نوشی سے پرہیز کرنا ہو گا۔ صفائی ستھرائی کا خاص خیال رکھنا ہو گا۔ ضرورت کے مطابق دستانے ماسک کا بھی استعمال کرنا ہو گا۔ طبی ماہرین اور اولواالامر کی مجوزہ احتیاطی تدابیر و ہدایات پر بھی عمل کرنا ہو گا۔

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>اپنی سیکیورٹی پر بھی خصوصی توجہ دینی ہو گی۔ انٹرنیٹ کی مثال سے سمجھنا بہت آسان ہے۔ جس طرح انٹرنیٹ پر وائرس اور ہیکرز سے بچاؤ کے لیے فائر وال قائم کی جاتی ہے اسی طرح کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے فائر وال بنانی ہو گی۔ اس کے لیے شریعت اسلامیہ میں چودہ سو برس پہلے سے رہنمائی موجود ہے۔ فللہ الحمد۔۔ باوضو رہنا، صبح و شام کے اذکار، آخری تین قل، آیت الکرسی، سورة البقرة کی آخری دو آیات، درود شریف کی کثرت، دعاؤں، صدقات، خیرات اور توبہ و استغفار کا باقاعدگی سے اہتمام کر کے بہترین فائر وال قائم کی جا سکتی ہے۔

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>اللہ تعالی ساری دنیا کے انسانوں پر رحم فرمائے۔ بالخصوص امت محمدیہ علیہ الصلوة والسلام پر۔ اللہ تعالی ہمارے گناہوں کو معاف فرمائے۔ اپنی طرف رجوع کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔ اولو الامر کی اطاعت کی توفیق عطا فرمائے۔ اللہ تعالی اس وباء کو ہم سے اور ہمیں اس وباء سے دور فرمائے۔ اللہ تعالی خوف کو دور فرما کر ہمیں ہر سمت ہر جہت سے امن و سلامتی عافیت عطا فرمائے۔ اللہ تعالی ہمارے شہروں گلیوں مسجدوں اور خاص کر حرمین شریفین کی رونقوں کو بحال فرمائے۔ آمین۔

<p dir=”rtl” style=”direction: ltr; font-family: ‘Jameel Noori Nastaleeq’, ‘Alvi Nastaleeq’, ‘Nafees Web Naskh’, ‘Urdu Naskh Asiatype’, Al_Mushaf, Tahoma, sans-serif; font-size: 150%; line-height: 200%; text-align: right;”>وصلی اللہ علی النبی الکریم