Uncategorized

گواہیاں

دو دن میں دو بینک منیجرز کی ویڈیوز وائرل ہوئیں۔ دونوں نے اپنے اعمال پر بے شمار لوگوں کو گواہ بنا لیا۔

ایک محمد عمران حنیف اعوان، جو نیشنل بینک خوشاب میں ملازم تھا، کو بینک کے سیکیورٹی گارڈ نے قتل کر دیا۔ گارڈ نے منیجر پر قادیانی اور توہین رسالت کے الزامات عائد کئے۔ جس پر وقتی طور پر گارڈ عوام کی نظروں میں ہیرو بھی ٹھہرا۔

تاہم بعد ازاں نماز جنازہ کے موقع پر پیش امام صاحب نے نہ صرف خود منیجر کے ایمان کی اور اپنی مسجد میں نمازوں کی ادائیگی کی گواہی دی بلکہ جنازہ میں شریک مجمع سے بھی اس کے حق میں گواہیاں طلب کیں جس پر مجمع نے ہاتھ کھڑے کر کے منیجر کے حق میں گواہیاں دیں۔ یہ ویڈیوز سوشل میڈیا پر خوب وائرل ہوئیں اور یوں بے شمار لوگ اور گواہ بن گئے۔ مزید برآں سوشل میڈیا استعمال کرنے والوں نے جب اس منیجر کی وال کا جائزہ لیا تو وہاں بھی دین اسلام سے محبت پائی۔ سو وہاں سے بھی ڈھیروں گواہیاں جمع ہو گئیں۔

دوسرا منیجر۔۔۔ آہ۔
دوسرا فیصل بینک کا منیجر اپنی ایک ماتحت خاتون کے ساتھ غیر اخلاقی حرکت میں ملوث پایا گیا۔ بد قسمتی سے اس کے اس گھٹیا عمل کی ویڈیو بھی بن گئی اور سوشل میڈیا پر وائرل بھی ہو گئی۔ یوں وہ بھی اپنے عمل پر ہزاروں لوگوں کو گواہ بنا بیٹھا ہے۔ شنید ہے کہ بینک انتظامیہ نے اس کی اس حرکت پر اسے ملازمت سے برخاست کر دیا ہے۔ نیز اسٹیٹ بینک نے اسے آئندہ کسی بینک میں بھی ملازمت نہ دیئے جانے کے حکم نامے پر مہر ثبت کر دی ہے۔ اللہ تعالیٰ اسے توبہ کی توفیق عطا فرمائے۔ اور اس کی توبہ کو قبول فرمائے۔ آئندہ کے لئے ثابت قدمی عطا فرمائے۔

ان دونوں واقعات میں بڑی نصیحت اور عبرت کا سامان ہے۔
اول الذکر کی خوش قسمتی پر رشک آ رہا ہے اور
موخر الذکر کی بد قسمتی سے خوف محسوس ہو رہا ہے۔
اللہ تعالیٰ ستار العیوب ہے۔
گناہوں کی پردہ پوشی کیا کرتا ہے۔
خاص کر امت محمدیہ علیہ الصلاۃ والسلام پر تو خاص الخاص کرم و احسان ہے۔

جانے کیا ایسا سبب رہا ہو گا کہ
ستار العیوب نے اس پر سے
اپنی ستاری کی چادر کھینچ لی۔

اے اللہ ہم کون سے نیکو کار ہیں۔
اے علام الغیوب!
تو ہماری اصلیت سے ہماری خصلت سے ہماری ہر ہر حرکت سے واقف ہے۔
یا اللہ!
ہم خود کو اس قابل تو نہیں سمجھتے کہ ہمارے حق میں ایمان کی گواہیاں جمع ہوں۔۔۔

بس اتنی التجا ہے
کہ ہم پر سے اپنی ستاری کی چادر مت کھینچنا۔
ہمیں دنیا والوں کے سامنے ننگا نہ کر دینا۔
ہماری بد اعمالیوں کو دنیا والوں پر عیاں نہ کر دینا۔

اے ستار العیوب!
ہمارا بھرم قائم رکھنا۔
ہم تجھ سے پناہ چاہتے ہیں کہ ہم سے ایسا کوئی گناہ سر زد ہو کہ ہم رنگے ہاتھوں پکڑے جائیں۔۔۔
ہم تجھ سے پناہ چاہتے ہیں کہ ہم سے ایسا کوئی گناہ سر زد ہو کہ جس پر ہزاروں لوگ گواہ بن جائیں۔

اے غفار الذنوب!
ہمارے اگلے پچھلے ظاہری پوشیدہ خفیہ اعلانیہ تمام گناہوں کو اپنے فضل سے اپنی شان کریمی سے معاف فرما۔
اللھم اغفر لنا ما قدمنا و ما اخرنا و ما اعلنا و ما اسررنا و ما انت اعلم بہ منا انت المقدم و آنت المؤخر لا الہ الا انت۔
استغفر اللہ الذی لا الہ الا ھو الحی القیوم و اتوب الیہ
اللھم انک عفو کریم۔۔۔
تحب العفو
فاعف عنا یا کریم!
یا کریم!
یا کریم!
یا ارحم الراحمین۔ 🤲🤲🤲

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s